دنیا بھر میں کورونا کی تباہ کاریاں جاری، اموات 18 ہزار سے تجاوز کر گئیں

کورونا وائرس: 12 اپریل تک امریکا میں سب کچھ نارمل ہو جائے گا: صدر ٹرمپ
March 25, 2020
“تم مسیحا ہو اس قوم کے” جواد احمد کا کورونا کیخلاف برسرپیکار طبی عملے کو خراجِ تحسین
March 25, 2020

دنیا بھر میں کورونا کی تباہ کاریاں جاری، اموات 18 ہزار سے تجاوز کر گئیں

دنیا بھر میں کورونا وائرس کی تباہ کاریاں جاری ہیں اور197 ممالک تک پھیلنے والی وبا سے اب تک 18 ہزار سے زائد افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

گزشتہ برس دسمبر میں چین کے صوبے ہوبئی کے شہر ووہان سے منظر عام پر آنے والا کورونا وائرس 197 تک پھیل چکا ہے اور دنیا بھر میں پھیلنے والی وبا سے ہلاک افراد کی تعداد 18 ہزار 892 ہو گئی ہے جب کہ متاثر افراد کی تعداد 4 لاکھ 22 ہزار سے زائد ہو گئی ہے۔

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے صحت یاب افراد کی تعداد1 لاکھ 8 ہزار سے زائد ہو گئی ہے۔

چین میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 4 اموات رپورٹ ہوئی ہیں جس کے بعد وہاں ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 3 ہزار 281 ہو گئی ہے جب کہ کورونا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 81 ہزار 218 ہو گئی ہے۔

اٹلی میں ایک اور تباہ کن دن

اٹلی میں ایک ہی روز میں 743 مزید افراد ہلاک ہو گئے جس کے بعد یورپی ملک میں کل اموات کی تعداد 6 ہزار 820 ہو گئی ہے۔ اس کے علاوہ اٹلی میں کورونا وائرس کے 5 ہزار سے زائد نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس کے بعد مجموعی مریضوں کی تعداد 70 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

اطالوی حکومت نے ملک میں بڑھتے ہوئے کیسز کے باعث لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں پر ایک ہزار یورو جرمانے کا اعلان کیا ہے۔

اسپین میں بھی اموات 2800 سے تجاوز کر گئیں

اسپین میں بھی کورونا وائرس سے مزید 500 افراد کی ہلاکت کے بعد اموات کی تعداد 2 ہزار800 سے تجاوز کر گئی ہے جب کہ متاثرین کی تعداد40 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

فرانس میں متاثرہ افراد کی تعداد 22 ہزار سے زائد ہو گئی

کورونا وائرس نے فرانس میں بھی مزید 250 زندگیاں نگل لی ہیں جس کے بعد وہاں وبا سے ہلاک افراد کی تعداد 1100ایک ہزار 100 ہو گئی ہے، متاثرافراد بھی 22 ہزار 300سے زائد ہو گئے ہیں۔

جرمنی میں مزید 36 ہلاک

جرمنی میں مزید 36ہلاکتوں کے بعد مجموعی تعداد 159 ہوگئی ہے جب کہ متاثرہ افراد کی تعداد 32 ہزار 781 ہو گئی ہے۔

ہالینڈ، سویڈن اور بیلجیم میں بھی مزید ہلاکتیں

اس کے علاوہ کورونا وائرس سے ہالینڈ میں 63 اور بیلجیم میں 34 افراد ہلاک ہو گئے ہیں جب کہ سویڈن میں کورونا وائرس کے باعث مرنے والوں کی تعداد 40 ہو گئی ہے اور 240نئے کیسزر پورٹ ہونے کے بعد وہاں مجموعی تعداد 2 ہزار 299 ہو گئی ہے۔

امریکا میں ایک ہی روز میں 222 اموات

امریکا میں ایک ہی روز میں 222 افراد کی ہلاکت کے بعد مجموعی اموات کی تعداد 775 تک پہنچ گئی ہے جب کہ 9 ہزار سے زائد نئے کیسز رپورٹ ہونے کے بعد مریضوں کی تعداد 54 ہزار 808 ہو گئی ہے۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق امریکا میں کورونا میں مبتلا نصف سےبھی زائد افراد کا تعلق نیویارک سے ہے جب کہ لاس اینجلس میں کورونا کے 6 سو سے زائدکیسز ہیں اور 80 فیصدافراد کی عمریں 18 سے 35 برس کے درمیان ہیں۔

امریکا کی ریاست نیویارک میں کورونا سے بیمار افراد کی تعداد تعداد 25 ہزار سے زائد ہے جس کے باعث نیویارک کا حال ہی میں دورہ کرنے والے اور واپس جانے والوں کو قرنطینہ کی ہدایت کی گئی ہے۔

اس کے علاوہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے کیلی فورنیا گالف کورس میں آنے والے افراد بھی کورونا وبا کا شکار ہو گئے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کی امریکا کو تنبیہ

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے امریکا کو خبردار کیا ہے کہ اگر اس نے وبا پر قابو پانے کے لیے فوری طور پر اقدامات نہ کیے تو آنے والے دنوں میں امریکا دنیا میں وبا کا مرکز ہو گا۔

ایران میں بھی کورونا سے ہلاکتوں کا سلسلہ جاری

ایران میں عالمگیز وبا سے مزید 122 افراد کی ہلاکت کے بعد وہاں اموات کی مجموعی تعداد ایک ہزار 934 ہو گئی ہے جب کہ مریضوں کی تعداد 24 ہزار 811 ہو گئی ہے۔

نیوزی لینڈ میں ایمرجنسی نافذ

نیوزی لینڈ نے کورونا کے 50 نئے کیسز سامنے آنے کے بعد ملک میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔

ایمرجنسی نافذ کرنے کا اعلان نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے کیا۔

یو اے ای میں پاکستانی سمیت 4 افراد صحتیاب

متحدہ عرب امارات کی وزارت صحت نے مزید 50 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق کی ہے جس کے بعد عرب ملک میں متاثرہ افراد کی تعداد 248 ہوگئی ہے جب کہ 4 افراد صحت یاب بھی ہو چکے ہیں جس میں ایک پاکستانی بھی شامل ہے۔

بھارت 21 روز کیلیے لاک ڈاؤن

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے 22 مارچ کو جنتا کرفیو کے بعد کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے ایک ارب 30 کروڑ آبادی والے ملک کو 21 روز کے لیے لاک ڈاؤن کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ملائیشیا میں لاک ڈاؤن میں 2 ہفتوں کی توسیع

ملائیشین وزیراعظم محی الدین یاسین نے ملک میں کورونا وائرس سے 17 ویں ہلاکت اور مزید 172 کیسز سامنے آنے کے بعد 18 مارچ سے شروع ہونے والے لاک ڈاؤن میں مزید 2 ہفتوں کی توسیع کر دی ہے۔